Category «احمد راہی»

غمِ حیات میں کوئی کمی نہیں آئی (احمد راہی)

غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی نظر فریب تھی تیری جمال آرائی وہ داستاں جو تری دلکشی نے چھیڑی تھی ہزار بار مری سادگی نے دہرائی تری وفا ، تری مجبوریاں ، بجا، لیکن یہ سوزش غم ہجراں ، یہ سرد تنہائی فسانے عام سہی ، مری چشم حیراں کے تماشا بنتے رہے ہیں …

جاؤ، شیشے کے بدن لے کے کدھر جاؤ گے (احمد راہی)

جاؤ، شیشے کے بدن لے کے کدھر جاؤ گے لوگ پتھر کے ہیں چھُو لیں گے بکھر جاؤ گے مسکراہٹ کی تمنا لیے نکلو گے، مگر اک صفر لے کے فقط شام کو گھر جاؤ گے چاند سونے کے پہاڑوں سے نہیں اترے گا تم سمندر ہو،۔۔۔۔ بہرحال اتر جاؤ گے میں تو خوشبو ہوں …

دل پہ جب درد کی افتاد پڑی ہوتی ہے (احمد راہی)

دل پہ جب درد کی افتاد پڑی ہوتی ہے دوستو وہ تو قیامت کی گھڑی ہوتی ہے جس طرف جائیں جہاں جائیں بھری دنیا میں راستہ روکے تری یاد کھڑی ہوتی ہے جس نے مر مر کے گزاری ہو یہ اس سے پوچھو ہجر کی رات بھلا کتنی کڑی ہوتی ہے ہنستے ہونٹوں سے بھی …

غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی (احمد راہی)

غم حیات میں کوئی کمی نہیں آئی نظر فریب تھی تیری جمال آرائی   وہ داستاں جو تری دلکشی نے چھیڑی تھی ہزار بار مری سادگی نے دہرائی   تری وفا ، تری مجبوریاں ، بجا، لیکن یہ سوزش غم ہجراں ، یہ سرد تنہائی   فسانے عام سہی ، مری چشم حیراں کے تماشا …