Category «افتخار نسیم»

اس کے چہرے کی چمک کے سامنے سادہ لگا (افتخار نسیم)

اس کے چہرے کی چمک کے سامنے سادہ لگا آسماں پہ چاند پورا تھا مگر آدھا لگا جس گھڑی آایا پلٹ کر اک میرا بچھڑا ہوا عام سے کپڑوں میں تھا وہ پھر بھی شاہزادہ لگا ہر گھڑی تیار ہے دل جاں دینے کے لیے اس نے پوچھا بھی نہیں یہ پھر بھی آمادہ لگا …