Category «Uncategorized»

اے شخص! اگر جوش کو تو ڈھونڈنا چاہے (جوش ملیح آبادی)

پروگرام اے شخص ! اگر جوش کو تو ڈھونڈنا چاہے وہ پچھلے پہر حلقئہ عرفاں میں ملے گا اور صبح کو ناظرِ نظارۃ قدرت طرفِ چمن و صحنِ بیاباں میں ملے گا اور دن کو وہ سرگشتئہ اسرار و معانی شہر ہنر و کوئے ادیباں میں ملے گا اور شام کو وہ مردِ خدا رندِ …

تُو ہے تو تِرے طالبِ دیدار بہت ہیں (منیر شکوہ آبادی)

تُو ہے تو تِرے طالبِ دیدار بہت ہیں یوسف ہے سلامت تو خریدار بہت ہیں پھر جائے خدائی تو بتوں سے نہ پھریں ہم پتھر میں بھی اللہ کے اسرار بہت ہیں وحدت کے طلب گاروں کو کثرت سے علاقہ میں ایک ہوں، تو ایک ہے، اغیار بہت ہیں باہر نہیں اس سلسہ سے اہلِ …

جس طرح ترکِ تعلق پہ ہے اصرار اب کے (مصطفیٰ زیدی)

شہناز جس طرح ترکِ تعلق پہ ہے اصرار اب کے ایسی شدت تو مرے عہدِ وفا میں بھی نہ تھی میں نے تو دیدہ و دانستہ پیا ہے وہ زہر جس کی جرات صفِ تسلیم و رضا میں بھی نہ تھی تو نے جس لہر کی صورت سے مجھے چاہا تھا ساز میں بھی نہ …

آ کے پتھر تو مرے صحن میں دو چار گرے (شکیب جلالی)

آ کے پتھر تو مرے صحن میں دو چار گرے جتنے اس پیڑ کے پھل تھے پسِ دیوار گرے ایسی دہشت تھی فضاؤں میں کھلے پانی کی آنکھ جھپکی بھی نہیں ، ہاتھ سے پتوار گرے مجھے گرنا ہے تو میں اپنے ہی قدموں میں گروں جس طرح سایئہ دیوار پہ دیوار گرے تیرگی چھؤڑ …

بے نام دیاروں کا سفر کیسا لگا ہے (شفیق سلیمی)

بے نام دیاروں کا سفر کیسا لگا ہے اب لوٹ کے آؤ ہو تو گھر کیسا لگا ہے کیسا تھا وہاں گرم دوپہروں کا جھلسنا برسات رتوں کا یہ نگر کیسا لگا ہے دن میں بھی دہل جاتا ہوں آباد گھروں سے سایا سا مرے ساتھ یہ ڈر کیسا لگا ہے ہونٹوں پہ لرزتی ہوئی …

سنا ہے زمیں پر۔۔۔۔۔۔! (محسن نقوی)

!سنا ے زمیں پر۔۔۔۔۔ سُنا ہے    زمیں پر وہی لوگ ملتے ہیں ۔۔۔۔۔جن کو کبھی آسمانوں کے اپس پار روحوں کے میلے میں اِک دوسرے کی محبت ملی ہو۔۔۔۔!  مگر تم کہ میرے لیے نفرتوں کے اندھیرے میں ہنستی ہوئی روشنی ہو !لہو میں رچی !!رگوں میں بسی ہو ہمیشہ سکوتِ شبِ غم میں …

لفظ کیوں شرماتے ہیں (آشفتہ چنگیزی)

لفظ کیوں شرماتے ہیں وعدے آخر وعدے ہیں لکھا لکھایا دھو ڈالا سارے ورق پھر سادے ہیں تجھ کو بھی کیوں یاد رکھا سوچ کے اب پچھتاتے ہیں ریت محل دو چار بچے یہ بھی گرنے والے ہیں جائیں کہیں بھی تجھ کو کیا  شہر سے تیرے جاتے ہیں گھر کے اندر جانے کے اور …